فرانس کے سابق وزیر اعظم کی جانب سے ماحولیاتی امور میں برازیل کے نمایاں کردار پر زور

دومینک ولیپاں نے آج ماناؤس میں تیسرے عالمی ماحول دوست فورم میں حصہ لیا جس میں تقریباً 900 حاضرین نے شرکت کی

ماناؤس، برازیل، 26 مارچ 2012ء / پی آر نیوز وائر /

سابق فرانسیسی وزیر اعظم دومینک ولیپاں نے آج ماناؤس میں تیسرے عالمی ماحول دوست فورم کے موقع پر ماحولیاتی معاملات اور ماحول دوستی میں برازیل کے کردار کو سراہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ “آپ ممکنات والا ملک ہیں، اور ایمزونیا اقتصادی مواقع تخلیق کرنے کے لیےپائیدار ترقی کا ایک نمونہ بن سکتا ہے۔” ولیپاں نے برازیل کی اپنائے ہوئے اقدامات جیسے فیملی ویلفیئر گرانٹس (بولسا فیملیا) اور نیشنل پارکس بنانے کو سراہا اور برازیل و یورپ کے درمیان علاقائی تعاون کے لیے آواز اٹھائی۔ ایونٹ کو ایل آئی ڈی ای – گروپو ڈے لائیڈریس امپرساریائز (کاروباری رہنماؤں کے گروپ) – نے اسپانسر کیا اور ایکس وائی زی لائیو نے پیش کیا۔

(تصویر: http://www2.prnewswire.com.br/imgs/pub/2012-03-24/original/639.jpg )

انہوں نے کہا کہ “ہمیں تقسیم اور تنازعات پر ضرور قابو پانا ہے اور توانائی کے ذرائع و پانی کے ذخائر کی حفاظت کے لیے ایک مشترکہ منصوبہ بندی کرنی ہے۔ ہمیں یورپی یونین اور برازیل کے درمیان اسٹریٹجک شراکت داری کی ضرورت ہے۔” سابق وزیر اعظم نے لاطینی امریکا میں برازیل کے ثالثی و قائدانہ کردار پر بھی زور دیا۔ “آپ لوگ ان میں سے ایک ہیں جو براعظم میں سب سے زیادہ دلچسپی رکھتے ہیں اور اسی وجہ سے آپ پر بڑی ذمہ داری ہے: براعظم کے ممالک کے درمیان ہم آہنگی پیدا کی جائے۔” ولیپاں کی نظر میں لاطینی امریکا اس سے قبل کبھی بھی متحد ہو کر اس سمت میں آگے نہیں بڑھا۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ پائیدار ترقی کے متعلق فیصلے بڑی حد تک ابھرتے ہوئے ممالک کے ہاتھوں میں ہیں اور یہ کہ انہیں محاذ آرائی اور تعاون کے درمیان؛ قیادت اور مشابہت کے درمیان میں سے انتخاب کرنا ہوگا۔

بعد ازاں گرین پیس کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر کومی نائیڈو نے “ماحولیاتی اثرات کے لیے اداروں کی ذمہ داری” پر بات کی۔ انہوں نے کاروباری شخصیات اور برازیلی حکومت کے افسران سے سب کے لئے روزگار کے مواقع کو فروغ دینے والی پائیدار ترقی اور اقتصادی ترقی دونوں کو ممکن بنانے والے حلوں پر ماہر ماحولیات کے ساتھ مل کر کام کرنے کی اپیل کی۔ “ہم دو شاخوں کو توڑ سکتے ہیں جنہوں نے آج تک دنیا کو تقسیم کر رکھا ہے، جب سے ہم سب کے لیے موسمیاتی تبدیلی کا نتیجہ ہے۔ ہمیں ایک عالمی خاندان کی طرح کام کرنا ہوگا کیوں کہ اگر ہم غلط کام کرتے ہیں تو ہم سب کو جھیلنا پڑے گا اور اثرات تباہ کن ہوں گے۔”

اس گفتگو کا اختتام کرتے ہوئے زراعت کے سابق وزیر روبرٹو روڈریگوس نے “برازیل میں کم کاربن زراعت کے امکانات” کے موضوع پر گفتگو کی۔ انہوں نے اچھے ماحولیاتی اقدات کے ساتھ برازیلی زراعت کی پیداوار بہتر بنانے کے لیے درسگاہوں خصوصاً ایمبراپا (امپریسا برازیلر ا دے پیسکویسا ایگروپکیاویریا (برازیل زرعی تحقیقاتی ادارہ) کے اقدامات پر زور دیا۔

سی ڈی این کومیونی کوکوا کارپوریٹو: erica.valerio@cdn.com.br، +55-11-8093-7156

Leave a Reply